کیا طالبان حکومت نائن الیون کے 20 سال مکمل ہونے والے روز حلف اٹھائے گی؟

امریکا اور یورپی یونین کی جانب سے طالبان کی عبوری حکومت پر خدشات کا اظہار کیا گیا ہے

ویب ڈیسک: نئی افغان حکومت 11 ستمبر کو نائن الیون کے 20 سال مکمل ہونے والے روز حلف اٹھائے گی۔

طالبان کی جانب سے دو روز قبل عبوری حکومت کا اعلان کیا گیا تھا جس میں ملا محمد حسن اخوند کو افغانستان کا وزیراعظم جبکہ ملا عبدالغنی برادر اور مولوی عبدالسلام حنفی کو نائب وزرائے اعظم مقرر کیا گیا تھا۔

اب اطلاعات ہیں کہ نئی افغان کابینہ امریکا میں ورلڈ ٹریڈ ٹاور پر ہونے والے حملے کے 20 سال مکمل ہونے والے روز یعنی 11 ستمبر کو حلف اٹھائے گی۔

امریکا اور یورپی یونین کی جانب سے طالبان کی عبوری حکومت پر خدشات کا اظہار کیا گیا ہے جبکہ پاکستان کی جانب سے نئی افغان حکومت کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیے: طالبان حکومت کو درپیش چیلنجز

امریکی وزیر خارجہ انتھونی بلنکن کا کہنا تھا کہ طالبان حکومت میں ایسے لوگ بھی شامل ہیں جو امریکی اداروں کو مطلوب ہیں، طالبان کو نئی حکومت کے بعض ناموں کے لیے دنیا سے قانونی حیثیت حاصل کرنی پڑےگی۔

دوسری جانب ترجمان پاکستانی دفتر خارجہ نے امید ظاہر کی ہے افغانستان میں نئے سیاسی انتظام کے تحت امن و استحکام اور سلامتی کو یقینی بنایا جائے گا۔

سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل نے کہا کہ سعودی عرب افغان عوام کی مدد کے لیے پُرعزم ہے، افغان عوام بغیر بیرونی مداخلت جو راستہ بھی منتخب کریں سعودی عرب حمایت کرے گا۔

دوسری جانب ترکی کے وزیر خارجہ میولوت چاوش اولو نے اعلان کیا ہے کہ ترکی طالبان حکومت کو تسلیم کرنے میں جلد بازی نہیں کرے گا۔

یہ بھی پڑھیے: طالبان کی عبوری حکومت میں کون کس عہدے پر فائز ہوگا؟ مکمل فہرست سامنے آگئی

اپنے ٹی وی انٹرویو میں ترک وزیر خارجہ کا کہنا تھاکہ دنیاکو بھی طالبان حکومت کو تسلیم کرنے میں جلدی نہیں ہونی چاہیے۔ ان کا کہنا تھاکہ متوازن حکمت عملی کی ضرورت ہے اور ترکی مختلف عوامل کی بنیاد پر فیصلہ لے گا۔

میولوت چاوش اولو نے امید کا اظہار  کیا کہ افغانستان میں نوبت خانہ جنگی تک نہیں پہنچے گی۔ ترک وزیرخارجہ کے مطابق افغانستان میں اس وقت معاشی بحران اور قحط جیسی صورتحال ہے جبکہ ہم قطر اور امریکا سے کابل ائیرپورٹ سے متعلق بات کررہے ہیں۔

خیال رہے کہ گزشتہ روز طالبان نے اپنی عبوری کابینہ کا اعلان کیا تھا جس میں ملا محمد حسن اخوند کو عبوری وزیراعظم مقرر کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ ملا عبدالغنی برادر اورمولوی عبدالسلام حنفی نائب وزرائے اعظم ہوں گے۔

مزید خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button