کیا پیر سے پرائمری اسکول کھولے جانے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے؟

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ ویکسین کی کمی کے باعث اتوار کے روز ویکسینیشن مراکز بند رہیں گے

کراچی: حکومت سندھ نے 21 جون پیر کو پرائمری اسکول دوبارہ کھولنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی صدارت میں کورونا ٹاسک فورس کا اجلاس ہوا، جس میں صوبائی وزراء عذرا پیچوہو، سعید غنی، ناصر شاہ، مرتضی وہاب اور دیگر نے شرکت کی۔

بریفنگ کے دوران بتایا گیا کہ سندھ میں کورونا وائرس کی تشخیصی شرح 3.9 ہے، کراچی میں یہ 8.08 اور حیدرآباد میں یہ 4.3 فیصد، کراچی ایسٹ میں 14٪، جنوبی 10٪، وسطی میں 9٪، مغرب میں 8٪، ملیر میں ہے جبکہ کورنگی اور سکھر میں 7.7 فیصد کیس رپورٹ ہوئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے: ملک میں کورونا سے ایک ہی دن میں مارچ 21 کے بعد سب سے کم اموات

اس موقع پر وزیر اعلی نے کہا کہ سندھ میں کورونا کے کیسز کی تعداد کم ہورہی ہے اور جب تک لوگ ایس او پیز پر عمل پیرا ہوتے رہیں گے تب تک یہ کمی جاری رہے گی۔

وزیراعلیٰ کو ویکسین سے متعلق بریفنگ میں بتایا گیا کہ اسپوٹنک ویکسین ماہ جون کے آخری ہفتے میں آجائیں گی جب کہ 15 لاکھ سائنو ویک کی ڈوزز جون 21 کو سندھ میں آجائیں گی، پاک ویک کی 4 لاکھ ڈوزز بھی جون 23 کو ملیں گی۔

ترجمان کے مطابق، اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ ویکسین کی کمی کے باعث اتوار کے روز ویکسینیشن مراکز بند رہیں گے۔

اجلاس میں 21 جون سے پرائمری اسکول کو دوبارہ کھولنے کا فیصلہ کیا گیا جبکہ صوبے میں تمام درگاہوں، تفریحی پارکوں اور انڈور جمز کو 28 جون سے دوبارہ کھولنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

مزید خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button