سندھ میں سرکاری دفاتر، تمام تعلیمی ادارے اور انٹرسٹی ٹرانسپورٹ بند کرنے کا فیصلہ

کورونا کی صورتحال انتہائی تشویشناک ہے، اگر عوام نے ذمہ داری نہ نبھائی تو حکومت کے پاس سخت کارروائی کرنے کے سوا کوئی چارہ نہیں ہوگا: مرتضی وہاب

ممتاز مہرانوی

کراچی: سندھ میں کورونا کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے اہم فیصلے کیے گئے ہیں۔ صوبے بھر کے تمام جامعات، کالجز اور تمام اسکولز سمیت سرکاری دفاتر بھی بند کرنے کا اعلان کردیا گیا ہے۔

صوبائی کورونا وائرس ٹاسک فورس کا اجلاس وزیراعلیٰ سندھ کی زیرصدارت ہوا جس میں سرکاری دفاتر بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ سیکریٹری اپنے ضروری عملے کو دفاتر میں طلب کریں گے اور دیگر تمام عملہ اپنے گھروں سے کام کرے گا۔

ریستوراں میں اور باہر کا کھانا بند ہوگیا

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ صوبے میں ریستوران کے اندر اور باہر کا کھانا بند کردیا جائے گا لیکن ٹیک وے اور ڈلیوری کھلی رہے گی جبکہ خریداری مراکز شام 6 بجے کے بعد بند ہوجائیں گے۔

اس کے علاوہ جیلوں میں ملاقات بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جبکہ دفاتر میں پبلک ٖڈیلنگ پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔ آفس اوقات صبح 9 بجے سے دوپہر 2 بجے تک ہوں گے، جبکہ اسپتالوں کو تمام پابندیوں سے استثنیٰ دیا جائے گا۔

اگر کورونا کیسز میں مزید اضافہ ہوتا ہے تو مارکیٹیں مکمل طور پر بند ہوجائیں گی: فیصلہ

دوسری جانب سندھ حکومت کے ترجمان مرتضی وہاب نے ٹوئیٹر پر جاری ایک بیان میں کہا ہے کہ کورونا کی صورتحال انتہائی تشویشناک ہے، اگر عوام نے ذمہ داری نہ نبھائی تو حکومت کے پاس سخت کارروائی کرنے کے سوا کوئی چارہ نہیں ہوگا۔

اجلاس میں 29 اپریل سے بین الصوبائی ٹرانسپورٹ بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا۔ تاہم سامان کی نقل و حمل اور صنعتیں ایس او پیز کے ساتھ کھلی رہیں گی۔ مرتضی وہاب نے بتایا کہ انتیس اپریل سے سندھ بھر میں انٹرسٹی پبلک ٹرانسپورٹ بند رہے گی۔

حکومت سندھ کے ترجمان نے کہا ہے کہ کورونا کی تیز رفتار لہر کی وجہ سے صوبے کے تمام کالج، اسکول اور یونیورسٹیاں بند رہیں گے، جب کہ دفاتر میں 20 فیصد ضروری عملے کو بلایا جائے گا۔

مرتضیٰ وہاب کا کہنا تھا کہ جیل میں قیدیوں سے ملاقاتیں اور ریسٹورنٹ میں ان ڈور اور آؤٹ ڈور ڈائننگ بند اور ٹیک اوے اور ڈلیوری کی سہولت جاری رہے گی، شاپنگ سینٹر 6 بجے کے بعد بند کیے جائیں گے اور اگر کیسز بڑہے تو بازار مکمل بند کردیے جائیں گے، سندھ میں 29 اپریل سے انٹر سٹی ٹرانسپورٹ بند کردی جائے گی، تاہم گڈز ٹرانسپورٹ اور انڈسٹریز کھلی رہیں گی، دفتری اوقات صبح 9 بجے سے 2 بجے تک ہوگا۔

پنجاب کے 24 اضلاع میں آج سے اسکولز غیر معینہ مدت کیلئے بند

آج سے پنجاب کے24 اضلاع میں تمام سرکاری اورنجی اسکول غیر معینہ مدت کے لیے بند کرنے کردیےگئے۔ وزیر تعلیم پنجاب نے کہاکہ جن اضلاع میں کورونا کیس کی شرح 5 فیصد سے زیادہ ہے وہاں تعلیمی سرگرمیاں معطل کر دی گئی ہیں۔

دوسری جانب سی ای او ایجوکیشن سیالکوٹ نے آج تمام تعلیمی ادارے کھولنے کے احکامات جاری کردیے۔ معاون خصوصی ڈاکٹر فردوس نے بھی کہاکہ ضلع سیالکوٹ کے تمام تعلیمی ادارے کھلیں گے۔

انہوں نے بتایا کہ اتوار کی صبح تک سیالکوٹ میں کورونا کیسز کی شرح 5 فیصد سے زائد تھی تاہم نئے ڈیٹا کے مطابق سیالکوٹ میں کورونا کیس کی شرح 3 فیصد پرآگئی ہے ۔

مزید خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button