آن لائین گیم پب کی وجہ سے ایک اور جان چلی گئی!!!

پولیس کے مطابق دوستوں نے 15 سالہ لڑکے حسن عباس کو اغوا کرکے موت کے گھاٹ اتارا

لاہور: پب جی گیم پر بلاک کرنے کی وجہ سے دوستوں نے مل کر دوست کو اغوا کر کے قتل کردیا۔

تفصیلات کے مطابق پب جی گیم کھیلتے بننے والی دوستی جان لیوا ثابت ہوئی۔پولیس کے مطابق دوستوں نے 15 سالہ لڑکے حسن عباس کو اغوا کرکے موت کے گھاٹ اتارا۔ رائیونڈ انویسٹی گیشن پولیس نے قتل کی واردات میں ملوث چار ملزموں کو گرفتار کرلیا ہے۔

پولیس کے مطابق پب جی گیم پر بلاک کیوں کیا، اس بات پر دوستوں نے مل کر حسن عباس کو اغوا کر کے قتل کیا، گرفتار ملزم عطا نے اپنے تین دوستوں مصور،نوید اور مظہر کے ذریعے اسے اغوا کیا۔ ملزم عطا نے اعتراف کرتے ہوئے بتایا کہ مقتول حسن عباس کو عطا نے بد فعلی کرنے کے بعد قتل کیا۔

ہمارا فیس بک پیج لائک کریں

پولیس کا کہنا ہے کہ رائیونڈ سے ملزموں نے حسن عباس کو اغوا کیا اور ننکانہ صاحب جا کر بدفعلی کی، ملزم عطا نے 13 جنوری کو رائیونڈ سے حسن عباس کو اغوا کیا تھا، اغوا ہونے والے بچے کی لاش شیخوپورہ سے ملی تھی۔ملزم عطا نے قتل کی واردات سے پہلے بھی حسن عباس سے کئی بار بد فعلی کرنے کا اعتراف کیا۔

یہ بھی پڑھیے:

فیصل آباد میں PUBG کھیلنے والے نوجوان کے ساتھ کیا ہوا؟

خیال رہے کہ اس سے قبل بھی پب جی گیم بہت سے جانیں لے چکی ہے،گزشتہ سال دسمبر میں کاشف نامی نوجوان پب جی گیم کی وجہ سے ذہنی توازن کھو بیٹھا تھا، اس کو ہسپتال منتقل کیا گیا،جہاں وہ دم توڑ گیا تھا۔23اگست 2020 کو لاہور کے علاقے اچھرہ میں 16 سالہ نوجوان نے پب جی گیم کھیلنے سے منع کرنے پر خودکشی کرلی تھی۔

ہمیں ٹوئیٹر پر فالو کریں

واضح رہے کہ پب جی نوجوانوں اور بچوں میں کافی مقبول آن لائن گیم ہے، جسے پاکستان سمیت دنیا بھر میں جنون کی حد تک کھیلا جاتا ہے جب کہ پڑوسی ملک بھارت میں بھی اس گیم کی وجہ سے اموات ہوچکی ہیں۔

مزید خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button